It is an honor to be a patriot 2

محب وطن ہونا اعزاز کی بات ہے

‏فطری جذبوں میں سب سے خوبصورت جذبہ اور کیفیت وطن سے محبت ہے اور اس میں ایسی کشش ہوتی ہے کہ انسان ساری دنیا گھوم لے مگر واپس لوٹ کر جب اپنے وطن آتا ہے تو اب و ہوا سے پہچان لیتا ہے کہ اپنے وطن میں داخل ہو چکا ہے اور دنیا کی خوبصورت ترین ‘ترقی یافتہ’ بہترین سجاوٹ اور غرض کسی بھی خوبصورتی سے سجی دنیا کو دیکھ آئے مگر اسکے ذہن کے نہاں خانوں میں جو تصویر چسپاں ہوتی ہے وہ اپنے وطن ہی کی رہتی ہے میں جب بھی وطنیت یا حب الوطنی کو سوچتا ہوں تو پہلا تصور آقا دو جہاں حضور اقدس صلی اللہ علیہ والہ وسلم کے الفاظ مبارکہ کی طرف چلا جاتا ہے کہ جب حضور اکرم صلی اللہ علیہ والہ وسلم مکہ کو چھوڑ کر مدینہ تشریف لے جا رہے تھے تو فرماتے ہیں مکہ تجھے چھوڑنے کر جانے کا دل تو نہی مگر تیرے لوگ مجھے رہنے نہی دے رہے گویا وطن سے عشق کی موجودگی گویا رگوں میں سنت کا عمل دوڑتا ہے
دنیا کے تمام ممالک چاہے وہ کسی بھی مذہب کے ماننے والے ہوں وطن سے محبت ہر ملک کے باشندے اپنی ریاست سے رکھتے ہیں حالانکہ جانور بھی اپنی جگہ کو پہچانتا اور اسی کی جانب لپکتا ہے اب جب کہ دنیا میں کئی سو ممالک ہیں مقابلے اورترقی کی دوڑ جاری ہے اور کامیاب صرف چند ممالک دکھتے ہیں کیوں؟ کیونکہ وہ اپنی ریاست کے ساتھ مخلص رہتے ہیں اپنے وطن سے محبت یہ ہے کہ آپ اپنی ریاست اپنے وطن کی بہتری کے کیے ہر ممکن کام کریں اور ایمانداری سے کریں چند ٹکوں کے عوظ اپنے وطن کی ایک اینٹ تک گروی مت رکھیں یہ آپکی دھرتی ماں کا آپ سے مطالبہ بھی ہے اور آپکا فرض بھی
اور صرف یہی نہی بلکہ خود اور اپنی آنے والی نسلیں جو آج آپکو اپنا مستقبل لگ رہی ہیں وہ کل آپکی دھرتی ماں کا حاضر موجود ہوں گی ان پر یہ کڑی ذمہ داری ہو گی کہ جتنے کرگس اپنے وطن کی طرف میلی آنکھ سے دیکھ رہے ہیں ان کے حرام نوالا بننے سے اپنے چمن کو بچائیں لہذا اپنے بچوں ‘ اپنی آنے والی نسلوں کے آنے اور انکی تربیت کریں کہ کل سر جھکا کر شرمندہ نہ ہوں اور تاریخ آپکے وطن کو ترقی یافتہ کامیاب اور نسلوں کو سنہرے الفاظ میں “محب وطن” لکھے

آپ عامر خان کو ٹویٹر پر بھی فالو @AmirKhan4rmJK کر سکتے ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں