The relationship is broken 3

رشتہ ٹوٹ گیا

ایک دوست کہنے لگا کہ میرا رشتہ ہوگیا ہے مگر میں نےوہ رشتہ توڑ دیا ہے۔
میں نےپوچھا کہ کیوں توڑا رشتہ؟
کہنےلگا کہ میرے ابو رمضان میں بیمار ہوے تھےتو میرے سسرال والےعیادت کےلیے آۓ تھے مگر کچھ لاۓ نہیں نہ پھل نہ ہی کوئی روپیہ پیسہ دےکر گئے۔

‎‏‏میرے باپ نے کہا کہ آج یہ لوگ ایسے ہیں تو کل کیا کریں گے مطلب نہ عیدی نہ شب بارات دن گے.اس لئے میں نے رشتہ ہی توڑ دیا۔
مگر میں نے کہا کہ یار یہ بتاٶ کہ اس لڑکی کے گھر والوں کے حالات کیسے تھے۔
کہنےلگا کہ بہت غریب لوگ ہیں کام کاج کرتےہیں
‏تو دو ٹایم کی روٹی با مشکل کھاتے ہیں۔
میں نےکہا کہ میرے بھائی جب آپ ان کی غربت کےبارے میں سب جانتےہیں۔
تو کیا آپ یہ جانتےہیں جس سے رشتہ توڑا ہے ان ماں باپ پہ کیا گزری ہوگی؟
اس بیچاری لڑکی پہ کیا گزری ہوگی کہ مجھے غربت کی وجہ سےچھوڑ دیا گیا۔

‏یار میرے ابو کہتے ہیں کہ اب رشتہ امیر گھرانے میں کرواؤں گا جو جہیز،شب برات عید سب دےسکیں جو تمہیں کاروبار سیٹ کروا سکیں
میں مسکرایا اور دل ہی دل میں سوچنےلگا کہ تمہارے ابو کہتےہیں یا تمہارا دل کہتا ہے۔
جاؤ یار جو اپنے زور بازو پر یقین نہ کر سکے

آج اگر بیٹی والوں کا رشتہ ٹوٹ جاۓ تو لوگ طرح طرح کی باتیں کرتے ہیں کہ شاید ان کی بیٹی میں کوئی خامی ہے۔
اگر بیٹے والوں کا رشتہ ٹوٹ جاۓ تو وہ فخر سے کہتا ہےیار مجھے پسند نہیں تھی میں چھوڑ دیا۔

‎‏خدارا بیٹی والوں پے ایسا ظلم نہ کریں میرے پوسٹ کرنے کا مقصد یہ ہےکہ جو لڑکے ابھی جوان ہیں وہ کبھی بھی کسی لڑکی کو اس کی غربت پہ نہ چھوڑیں نہ اس کے جزبات سے کھیلیں۔
یہ عورت ہی وہ ہستی ہےجو ہمیں دنیا میں لائی اور

‎‏یہ عورت ہی وہ ہستی ہے جس کے قدموں سے ہمیں جنت ملےگی
بس روپ بدل لیتی ہے ماں کا بیوی کا بہن کا مگر ہوتی تو عورت ہی ہے نا۔

تحریر ؛ غلام رسول

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں