1

‏زرعی نظام کو درپیش مسائل

پنجاب کے کسان اور زراعت؛
زراعت مٹی کو کاشت کرنے، فصلیں اگانے اور مویشیوں کی پرورش کا فن اور سائنس ہے۔ اس میں لوگوں کے استعمال کے لیے پودوں اور جانوروں کی مصنوعات کی تیاری اور بازاروں میں ان کی تقسیم شامل ہے۔ یہ پراڈکٹس، نیز استعمال شدہ زرعی طریقے، دنیا کے ایک حصے سے دوسرے حصے میں مختلف ہو سکتے ہیں۔
پاکستان ایک زرعی ملک ہے۔ پاکستان کا تقریباً 70فیصد زراعت پر انحصار ہے۔ پاکستان کی جی۔ڈی۔پی 18 فیصد زراعت پر منحصر ہے۔
‎پاکستان کے اندر چھ قسم کے کسان پائے جاتے ہیں۔
1:موٹے زمیندار/کسان (جن کی مربع سے اوپر زمین ہے)
2: درمیانےزمینداریا کسان (جن کی دس ایکڑ تک زمین ہے)
3: نچلے کسان (جن کی دو ایکٹر تک زمین ہے)
4: ٹھیکے پر زمین لے کر کاشتکاری کرنے والے کسان
5: حصے پر کاشتکاری کرنے والے کسان
6:اور کچھ ایسے کسان ہے خود کاشتکاری نہیں کرتے پر اپنی زمینیں ٹھیکے پر دیتے ہیں اور معاوضہ لیتے ہیں (مطلب کے چھ ماہ،سال یا جتنا بھی عرصہ مختص کرتے ہیں اسکے عوض معاوضہ لیتے ہیں)
موجودہ درپیش مسائل:
موجودہ حالات میں پاکستان میں زراعت سے متعلق درپیش مسائل میں،پانی کی کمی،موسمی،تبدیلیاں،مڈل مین کا کردار،کیڑے مارا ادویات،اور بیج مافیا کی اجارہ داری،ناقص،انفرااسٹرکچر،جدید تحقیق کا فقدان زراعت میں،فوڈ سکیورٹی،نئے کیڑوں کا حملہ۔ فائدے میں وہ کسان ہیں جن کی زمینیں زیادہ ہے چھوٹے کسان کو کھاد، سپر ، اور تیل کی کی زیادہ قمیتوں اور فصل کے ریٹ کی کمی کی وجہ سے خسارہ ہی خسارہ ہے.

تحریر؛ لاریب فاطمہ وڑائچ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں