67

‏فرقہ پرستی کے اسباب

وَاعتَصِموا بِحَبلِ اللَّهِ جَميعًا وَلا تَفَرَّقوا ۚ
آل عمران 103
اوراللہ کی رسی کو مظبوطی سے تھامے رکھو اور تفرقے میں مت پڑو
اللہ رب العزت نے اس بات کااعلان اپنی پاک کتاب قرآن مجید میں فرمایا
دیکھنا یہ ہے کہ اس پہ کس قدر عمل پیرا ہیں آج ہر کوئی یہ کہتا کہ میں سچا ہوں دوسرا نہیں ایک سے دوسے تین اور آگے یہ سلسلہ چل رہاہے مگر اس کا خاتمہ کیسے ممکن ہے ہے بھی یا نہیں؟
اس کی ایک وجہ ہے کہ ہم اپنی بات پہ انا کو مسلط کرلیتے ہیں دوسرے کی بات سننے کو تیار نہیں ہیں۔

اگرچہ اسلام نے واضح رہنمائی بھی کی کہ “جب تم میں کسی معاملے میں اختلاف ہوجاۓ تو پھر اس اللہ اور اسکے رسول کی طرف لوٹاؤ ”

مطلب کہ قران اور حدیث سے راہنمائی لے لو اگر ہم اس پہ عمل کریں تو ممکنہ حد تک خاتمہ ممکن ہے مگر ہم اپنے اپنے علماء کی گھیرا بندیوں میں مگن ہیں
عام آدمی جس مسجد یا سینٹر میں نماز ادا کرتا ہے اور دیگر معاملات میں رجوع کرتا ہے مگر اسلام کے مراملے نہیں وہ اسی عالم کی بات مانے گا جس کے پیچھے وہ نماز ادا کرتا ہے یاجس آئیڈیل مانتا ہے اب دیکھا جاۓ تو اختلاف صرف فقہی باتوں پہ ہی ہے ان کی وجہ سے تفرقہ بازی عروج پہ ہے اور فرقوں بنیاد پہ فقہ پہ ہی اٹکی ہوئی ہے

تحریر؛ محمد عادل حسین

آپ محمد عادل حسین کو ٹویٹر پر بھی @MA_H_5 فالو کرسکتے ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں